زمین کی حرکتیں (Motions of the Earth) آیئے کریں جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ زمین کی دو طرح کی حسیں ہیں: گوری گردش سر زمین کو ظاہر کرنے کے (Rotation) اور طواف دینی مداری گردش (Revolution محوری گردش زمین سورج کو ظاہر کرنے کے لیے ایک جلتی ہوئی کیا وہ حرکت ہے جو وہ اپنے محور پر کرتی ہے اور زمین کی وہ حرکت جو وہ سورج کے کما لیے ایک بال بچے اور موم بتی لیجیے۔ بال پر شہر کو ظاہر کرنے چاروں طرف ایک متعین راه یا مدار (Orbit) میں کرتی ہے۔ طواف یا مداری گردش کے لیے ایک نقطہ لگایئے۔ اب بال کو اس کہلاتی ہے۔ طرح رکھے کہ شہر x اندھیرے میں رہے۔ اب بال کو بائیں سے دائیں جانب گھمائیں۔ زمین کا محور جو ایک خیالی خط ہے، مدار کی من (Orbital plane) سے جب آپ بال کو دھیرے دھیرے گھمائیں گے 66° کا زاویہ بناتا ہے۔ مدار جون بناتا ہے وہ دار کیس کہلاتی ہے۔ زمین تو شہرxمیں پہلے سورج طلوع (Sunrise) سورج سے روشنی حاصل کرتی ہے۔ چونکہ زمین کی شکل کت و نما ہونے کی وجہ سے ہوگا اور جب بال کو لگاتار گھمائیں گے تو نقطہ xدھیرے دھیرے سورج سے دور ہوتا جاۓ زمین کے آدھے حصہ پر ہی ایک وقت میں سورج کی روشنی پڑتی ہے (شکل 3.2)۔ گا اور بالآخر سورج غائب ہو جائے گا۔ اسے زمین کا وہ حصہ جو سورج کے سامنے ہے یعنی جس پر سورج کی روشنی پڑتی ہے وہاں غرب آفتاب (Sunset) کہتے ہیں۔ دن، رہتا ہے اور زمین کا وہ حصہ جو سورج کی کرنوں سے دور مخالف سمت میں ہوتا زمین کے مداری (مستوی) سے مووی خط ہے وہاں رات ہوئی ہے۔ قطب شمالیر 23 ماهان 7 خط استوا 664 خط جدید وہ دائرہ جو گلوب پر دن اور رات کو بانٹتا ہے روشنی کا دائرہ (Circle of Illumination) کہلاتا ہے۔ اس دائرہ کا محور زمین کے مدار | کی سے (مستوی) سے کہیں میں نہیں ہے جیسا کہ آپ شکل 3.2 میں دیکھ سکتے ہیں۔ زمین اپنے محور پر ایک گردش کو پورا کرنے میں 24 گھنٹے لگاتی ہے۔ زمین کی محوری گردش کے اسی وقت کو زمین کا ایک دن Earth) (Day کہتے ہیں۔ بی زمین کی روزانہ کی جانے والی حرکت ہے۔ شكل 3.1 : زمین کے محور اور مدار کی سطح کا جهکاؤ در اورمدار کھیل کا حج کاو (Day تے ہیں۔ قطب جنوب وCtree offluentinatio قطب جنوب شکل 3.2 : زمین کی محوری گردش کی وجه سے دن اور رات کا بنا سوچیے اگر زمین نه گهومتی تو کیا هوتا؟ زمین کا وہ حصہ جو سورج کی طرف ہے اس پر ہمیشہ دن رہتا اور اس حصے پر لگا تارگرینی پڑتی رہتی اور دوسرے حصہ پر ہمیشہ رات ہوتی اور ہر وقت بہت زیادہ سردی پڑتی۔ ایسے انتہائی حالات میں زندگی مکن نہیں تھی۔ طواف یا برداری گردش زمین کی دوسری حرکت جو وہ سورج کے چاروں طرف اپنے مدار پر کرتی ہے طواف با مداری گردش کہلاتی ہے۔ سورج کے چاروں طرف ایک چکر پورا کرنے میں زمین کو 365 دن (ایک سال) لگتا ہے۔ ہم آسانی کے لیے ایک سال کو صرف 365 دن کا مانتے ہیں اور چھ گھنٹوں کو نظر انداز کردیتے ہیں۔ ہر سال جو چھ گھٹے پی جاتے ہیں وہ چار سال میں 24 گھنٹے ہو جاتے ہیں یعنی ایک فاضل دن۔ اس فاضل دن کو ہم فروری کے مہینے میں جوڑ دیتے ہیں۔ یہی سبب ہے کہ ہر چار سال بعد فروری کا مہینہ جو عموما 28 دن کا ہوتا ہے، 29 دن کا ہو جاتا ہے۔ 366 دن کے اس سال کو سال کبیر (Leap Year) کہتے ہیں۔ ذرا معلوم تو تھے کہ اگلا سال کبی کب ہوگا؟ شکل 3.3 سے صاف ظاہر ہے کہ زمین سورج کے چاروں طرف ایک بیوی شکل کے مدار (Elliptical Orbit) میں گھومتی ہے۔ زمین کی حرکتیں هار SN.P. (\ - نقطے اعتدال (21 بار) خزاں S.P شمالی نصف کرہ میں موسم گرما گریانی راس شمالی نصف کرہ میں موسم سرما سرمائی راس (22 دمبر )ال جوی نصف کرے میں موسم گرما 不不不不不 ۱ ۱ ۰ ۰ ۰ السرطان سورن ا(21جون) جنوبی نصف کرہ میں موسم سرما خزاں ) » ال نقطه اعتدال (23ستمبر) شکل 3.3 : زمین کی مداری گردش اور موسم اس بات پر دھیان دیکھے کہ اپنے مدار پر گھومتے وقت زمین مستقل ایک ہی سمت میں بھی رہتی ہے۔ عام طور پر ایک سال کو گرمی، سردی، بہار اور خزاں کے موسموں میں بانٹا جاتا ہے۔ موسموں کے یہ فرق سورج کے چاروں طرف چکر لگاتے وقت زمین کی مختلف پوزیشن کی وجہ سے ہوتا ہے۔ شکل 3.3 کو دیکھیے۔ آپ دیکھیں گے کہ 21 جون کو جنوبی نصف کرہ سورج کی طرف جھکا ہوا ہوتا ہے۔ اس موقع پر خط سرطان پر سورج کی کرنیں سیدھی پڑتی ہیں۔ نتیجتا ان علاقوں میں گرمی زیادہ ہوتی ہے قطبین کے قریبی علاقوں پر سورج کی کرنیں ترچھی پڑنے کی وجہ سے یہاں گرمی کم ہوتی ہے۔ کیونکہ قطب شمالی سورج کی طرف جھکا ہوا ہوتا ہے اسی لیے دائرہ قطب شمالی میں واقع مقامات پر چھ مہینوں تک مستقل دن رہتا ہے۔ کیونکہ شمالی نصف کرہ کے زیادہ تر حصہ پر سورج کی روشنی پڑتی رہتی ہے اسی لیے خط استوا کے شمالی حصوں میں موسم گرما ہوتا ہے۔ ان علاقوں میں سب سے لمبا دن اور سب سے چھوٹی رات 21جون کو ہوتی ہے۔ اس وقت جنوبی نصف کرہ میں بالکل برعکس حالات ہوتے ہیں۔ یہاں یہ موسم سرما یعنی زمین : همارا مسکن آئے کریں - کیا آپ جانتے ہیں کہ ایک بیوی شکل کا دائرہ (Elipse) کیسے بنایا جاتا ہے؟ ایک پسل، دو پین اور ایک دھاگہ لیے۔ دھاگہ کا پھندہ بنتا ہے۔ اب ان پتوں کو ایک پیپر پر تصویر میں دکھائے گئے طریقہ سے لگائیں۔ دھاگہ کے پھندے کو پیپر پر اس طرح رکھے کہ دونوں پر اس کے اندر آجائیں۔ نسل کو پڑے اور دھاگہ کوکس کر رکھ کر نسل کو گھماتے ہوئے ایک خط کھینچے ۔ بمشکل ایک بیوی شکل کے دائرہ کو ظاہر کر رہی ہے۔ سردی کا موسم ہوتا ہے۔ دونوں کے مقابلہ راتیں زیادہ بھی ہوتی ہیں۔ زمین کی اس پوزیشن کو گرمائی راس السرطان (Summer Solstice) کہتے ہیں۔ 22 دسمبر کو خط جدی پر سورج کی کرنیں سیدھی پڑتی ہیں کیونکہ اب قطب جنوبی سورج کی طرف جھکا ہوا ہوتا ہے اور کیونکہ خط جدی S 23°) پر سورج کی کرنیں سیدھی پڑتی ہیں اسی لیے جنوبی نصف کرہ کے زیادہ تر حصہ میں روشنی ہوتی ہے اور جنوبی نصف کرہ میں گرمی کا موسم ہوتا ہے۔ دن ہے اور راتیں چھوٹی ہوتی ہیں۔ اس وقت شالی نصف کرہ میں اس کے بس حالات ہوتے ہیں۔ یعنی دن چھوٹے اور راتیں بھی ہوتی ہیں نیز یہاں سردی کا موسم ہوتا ہے۔ زمین کی اس پوزیشن کو و آنے کریں: سرمائی راس السرطان (Winter Solstice) کہتے ہیں۔ کیا آپ جانتے ہیں کہ سر زمین کے ایک ہی سمت آسٹریلیا میں کرسمس موسم گرما میں منایا جاتا ہے؟ کے جھکاو کو سمجھنے کے لیے 21 مارچ اور 23 ستمبر کو خط استوا پر سورج کی کرنیں سیدھی پڑتی ہیں۔ اس زمین پر ایک بڑا سا بیضوی شکل کا دائرہ پوزیشن میں زمین کا کوئی بھی قطب سورج کی طرف جھکا ہوا نہیں ہوتا ہے۔ اس لیے بنانے اور ایک چھڑی میں لگا ہوا ایک جھنڈا ہے۔ بیضوی شکل کے اس دائرے پر ہیں ساری دنیا میں دن اور رات برابر ہوتے ہیں۔ اسی لیے اسے نقط اعتدال بھی کھڑے ہو جایئے۔ اپنے جھنڈے کا (Equinox) کہتے ہیں۔ دن کسی اور جگہ پر ایک کریں جیسے کہ طے 23 ستمبر کو شمالی نصف کرہ میں موسم خزاں اور جنوی نصف کرہ میں موسم بہار ہوتا شده نقطہ کی طرف کسی درخت کا اوپری سرا۔ ہے۔ 21 مارچ کو اس کے برعکس ہوتا ہے عین اس وقت شمالی نصف کرہ میں موسم اب اپنے جھنڈے کا رخ اس طے شدہ بہار اور جنوبی نصف کرہ میں موسم خزاں ہوتا ہے۔ نقطہ کی طرف رکھتے ہوئے آپ اس دائره پرگو میئے ۔ اسی طرح زمین کا نور بھی مستقل اس طرح اب آپ کو معلوم ہو گیا کہ دن اور رات کا بنا اور موسم کے بدلا ایک ہی طرف جھکا رہتا ہے۔ زمین کے بالترتیب زمین کی محوری گردش اور اس کے طواف مینی مداری گردش کی وجہ سے طواف اور اپنے طور پر ایک ہی سمت میں جھکاؤ کی وجہ سے ہی موم بنتے ہیں۔ ہوتے ہیں۔ زمین کی حرکتیں 2 ۔ مندرجہ ذیل سوالات کے فقر جواب دیئے۔ (a) زمین کے چور اور اس کے مدار کی سیٹ پر بنے والا زاویه انحراف کیا ہوتا ہے؟ (b محوری گردش اور طواف یا مداری گردش کی وضاحت کیے۔ ) سال کبیہ کیا ہوتا ہے؟ (0) گرمائی اور سرمائی راس السرطان میں فرق واضح کیے۔ (e) نقط اعتدال کیا ہے؟ | م کیا سبب ہے کہ جنوبی نصف کرہ میں گرمائی اور سرمائی راس السرطان شمالی نصف کرہ کے مقابلے میں مختلف اوقات میں پڑتا ہے؟ ي قطبین پر چھ مہینے کے دن اور چھ مہینے کی رات کیوں ہوتی ہے؟ 2۔ جواب پر نشان لگا ہے۔ (a) سورج کے چاروں طرف کی جانے والی زمین کی حرکت کو کیا کہتے ہیں؟ ) محوری گردش (ii) طواف یا مداری گردش (ii) انحراف (b) خط استوا پر سورج کی کرنیں سیدھی کب پڑتی ہیں؟ (1) 21مارچ (i) 21جون (iii) 22 دسمبر (0) موسم گرما میں کرسی کہاں منایا جاتا ہے؟ ) جاپان (ii) ہندوستان (ii) آسٹریلیا (a) موسم کے بدلاؤ کی وجہ کیا ہے؟ 0 محوری گردش (1) طواف یا مداری گرش اش کشش ثقل ۔ خالی جگہوں کو الفاظ کی مدد سے کھرپے: (a) ایک لوند کے سال میں دن ہوتے ہیں۔ (b) زمین کی روزانہ کی حرکت کہلاتی ہے۔ ) سورج کے چاروں طرف زمین مدار میں گھوڑتی ہے۔ (d) 21جون کو خط پر سورج کی کرنیں سیدھی پڑتی ہیں۔ کے موسم میں دن چھوٹے ہوتے ہیں۔ - (e) 26 زمین : همارا مسکن آیئے کچھ کام کریں ) 1۔ زمین کے اخراف کو دکھانے والی ایک ڈرائنگ بنایئے۔ 2۔ ہر مہینہ کی 21 تاریخ کو اپنے علاقہ کا سورج نکلنے اور ڈوبنے کا وقت اخبار کی مدد سے نوٹ کیے اور درج ذیل سوالات کے جواب لکھے: (a) کون سے مہینہ میں دن سب سے چھوٹا ہوتا ہے؟ (b کون سے مہینہ میں دن اور رات برابر ہوتے ہیں؟ برائے تفت داره براۓ تفت 1. دھاگے کے ایک چھندہ کا استعمال کر کے اور دو پوں کومختلف فاصلوں، پرینی ایک کو قریب اور دوسری کو دور رکھ کر مختلف بیوی شکل کے دائرے بنائے۔ اس بات پر دھیان دیکھے کہ بیوی شکل والا دائرہ کب عمل دائرہ بن جاتا ہے؟ ۔ ایک ایسے دن جب دھوپ کھلی ہو۔ ایک میٹر بی ڈنڈی کو کسی ہموار زمین پر گاڑ دیے تا کہ اس کی پرچھائیں بالکل نمایاں (Sharp بنے۔ مرحله 1: پرچھائیں کی نوک (کنارے) پرکسی پتھر ، تیلی یا کسی اور چیز سے نشان لگایئے۔ پرچھائیں کا پہلا نشان ہمیشہ مغرب کی طرف ہوگا۔ 15 منٹ بعد پھر دوبارہ پر چھائیں کی نوک پر نشان لگا ہے۔ اب یہ کچھ سینٹی میٹر کے فاصلے پر گئی ہوگی۔ ان دونوں نقاط کو ملانے اور پیچھے آپ کے پاس ایک مشرق مغرب خط (East-west Line) بن گیا۔ مرحله 2: کچھ اس طرح کھڑے ہوئے کہ پہلا نشان آپ کے بائیں طرف اور دوسرا نشان آپ کے دائیں طرف ہو۔ آپ کا منہ اب شمال کی طرف ہوگا۔ یہ حقیقت زمین پر ہر جگہ درست ہے کیونکہ زمین مغرب سے مشرق کی سمت گھومتی ہے۔ ایک دوسرا طریقہ اس سے بہتر ہے مگر اس میں زیادہ وقت لگتا ہے۔ اپنی پرچھائیں والی ڈنڈی کو گاڑ دیے اور پہلی پرچھائیں کا نشان می میں لگایئے۔ دھاگہ کے ایک ٹکڑے کا استعمال کر کے ڈنڈی کے چاروں طرف ایک ایسی قوس (Arc) بنائے جو اس نشان پر سے بھی گزرے۔ دوپہر میں پرچھائیں سکڑ جائے گی یا غائب ہو جائے گی۔ سہ پہر میں یہ پھر سے بھی ہونے لگے گی۔ اب اس جگہ پر جہاں بیتوس کو چھورہی ہو ایک دوسرا نشان لگا ہے۔ ان دونوں نشانوں کے درمیان ایک خط بنائے۔ اس سے آپ کو ایک درست مشرق مغرب خط ملے گا۔ ا|| زمین کی حرکتیں 27

RELOAD if chapter isn't visible.